سندھ کی عوام کو حقیقی آزادی کے لئے فرسودہ جاگیر دارانہ سیاست کی زنجیروں کو توڑنا ہوگا ،محمد رمضان مغل پاکستان فلاح پارٹی صوبہ سندھ کی مجلس عاملہ کا اجلاس ، سندھ بھر کے اضلاع و ڈویژن کے ذمہ داران کی شرکت،صوبائی صدر کا خطاب

کراچی ( ) پاکستان فلاح پارٹیٰ سندھ کی مجلس عاملہ کا اجلاس صوبائی صدرمحمد رمضان مغل ایڈووکیٹ کی زیر صدارت کراچی میں منعقد ہوا صوبائی صدر محمد رمضان مغل ایڈووکیٹ نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سندھ پر قابض اقتدارمافیا نے سندھ کو کرپشن ، بد انتظامی اور جہالت کے سوا کچھ نہیں دیا اور آج سندھ موہن جو دڑو سے بھی بدتر کھنڈرات میں تبدیل ہوچکا ہے سندھ کی ۵ ہزار قدیمی تہذیب آج دہریت کے پنجوں میں دم توڑ رہی ہے سندھ کی مظلوم بچیاں پھر ابن قاسم کی راہ تک رہی ہیں ۔انہوں نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ پیپلز پارٹی کی سیاست اقرباپروری ، موقع پرستی اور جاگیر دارانہ سیاست کے محور پر گھوم رہی ہے ۔آج کراچی پھر بھتہ خوری ، اغواء برائے تاوان اور پرچی مافیا کے رحم و کرم پر ہے جبکہ ایم کیو ایم اور اس کے گروپس مفادات کی بندر بانٹ میں لگے کراچی کو جلتے دیکھ رہے ہیں ۔انہوں نے چیف جسٹس ثاقب نثار سے مطالبہ کیا کہ خدارا نون لیگ کے شیر کو پنجرے میں ڈالنے کے بعد پی پی پی کے ظلم کے تیر کو قابو کرنے پر ترجیح دیں آج سندھ کا تعلیم ، صحت ، انصاف ، انرجی، امن و امان کے تمام نظام بوسیدہ اور زمین بوس ہونے کے درپے ہیں آج ۷۰ سال گزرنے کے باوجود سندھ کے عوام وڈیروں کے غلام بنے ہوئے ہیں ۔ اب سندھ کی عوام کو حقیقی آزادی کے لئے فرسودہ جاگیر دارانہ سیاست کی زنجیروں کو توڑنا ہوگا اور پسے ہوئے طبقے کے عام آدمی کو ایوانوں میں پہنچانا ہوگا ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی جنرل سیکریٹری ناصر رحیم نے کہا کہ بجلی چوری کو روکنا انتظامیہ کی ذمہ داری ہے اس کی سزا بل اداکرنے والے شہری کو دینا کھلی نا انصافی اور زیادتی ہے آج سندھ کے شہری و دیہی علاقے بد دیانت اور نا اہل حکمرانو ں کے رحم و کرم پر ہیں اور بنیادی انسانی ضروریات سے محروم ہیں اجلاس سے صوبائی رہنماؤں مشتاق حسین نوری ، ظہیر الاسلام ، سید مظہر علی شاہ ، لاڑکانہ ڈویژن کے رہنماء جان محمد ظفر، حیدرآباد ڈویژن کے رہنماء ابو انس ، شاہد محمود، میر پورخاص ڈویژن کے رہنماء گلزار قادری، سکھر دویژن کے رہنماء اعجاز سہتو، کراچی ڈویژن کے رہنماء شکیل الدین صدیقی اور ضلعی قائدین نے خطاب کیا ۔ اجلاس میں مرکزی سینئر نائب صدر ڈاکٹر خالد اقبال اور مرکزی فنانس سیکریٹری محمد علی شیخ نے خصوصی شرکت کی ۔ اجلاس میں متفقہ قراردادوں کے ذریعے مطالبہ کیا کہ سندھ کی معصوم بچی صائمہ جروار سے زیادتی وقتل کی ہولناک واردات پر قاتلوں کی گرفتاری اور فوری سزا کا مطالبہ کیاگیا ۔ سندھ کے سرکاری تعلیمی اداروں اور ہسپتالوں کے آڈٹ اور افادیت کو پرکھا جائے ۔سندھ کے قدرتی وسائل سے بجلی نہ بنانے پر سندھ حکومت کا محاسبہ کیا جائے۔کراچی کی عوام کو ٹینکر مافیا سے نجات دلائی جائے اور K4منصوبے کو فی الفور مکمل کیا جائے ۔کراچی کو کچرے سے پاک ہونے تک صوبائی حکومتوں کو ان کے دفاتر سے بے دخل کیا جائے ۔کراچی سرکلر ریلوے کی فوری بحالی پر کام کا آغاز کیاجائے اور اس ضمن میں ہونے والے گھپلوں اور کام کی تاخیر کا فوری نوٹس لیا جائے ۔